154

جموں کشمیرپیپلزپارٹی کا چیف جسٹس سپریم کورٹ آزادکشمیرکے خلاف یکم مارچ کواحتجاجی مظاہرے کااعلان

اسلام آباد(ویب ڈیسک )جموں کشمیرپیپلزپارٹی نے چیف جسٹس سپریم کورٹ آزادکشمیرکے خلاف یکم مارچ کواحتجاجی مظاہرے کاباضابطہ اعلان کردیا۔تفصیل کے مطابق یکم مارچ دن گیارہ بجے بمقام نیشنل پریس کلب اسلام آبادکے سامنے بھرپوراحتجاج کیاجائے گا۔
آزادکشمیرکی عدالت العالیہ میں 2018ء میں پانچ ججزکی تعیناتیاں آئین کوسبوتاژکرکے میرٹ کاقتل عام کرکے کی گئیں۔جس کے خلاف ضمیرکشمیرسردارخالدابراہیم خان نے اسمبلی فلورپربھرپورطریقہ سے آوازبلندکی۔چیف جسٹس سپریم کورٹ آزادکشمیرنے ضمیرکشمیرسردارخالدابراہیم خان کوغیرآئینی توہین عدالت کے نوٹسزجاری کئے ضمیرکشمیرسردارخالدابراہیم خان کی رحلت کے بعدجموں کشمیرپیپلزپارٹی نے آئینی راستہ اختیارکرتے ہوئے وزیراعظم پاکستان کے پاس چیف جسٹس سپریم کورٹ آزادکشمیرکے خلاف ایک ریفرنس دائرکیالیکن تاحال اس ریفرنس کاکوئی مثبت جواب نہ آسکا۔اسی پس منظراورحالات کومدنظررکھتے ہوئے جموں کشمیرپیپلزپارٹی نے چیف جسٹس سپریم کورٹ آزادکشمیرکے خلاف احتجاج کاحتمی فیصلہ کرلیاہے۔ان خیالات کااظہارجموں کشمیرپیپلزپارٹی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات سردارنویدحیات خان نے مرکزی دفتراسلام آبادسے جاری کردہ پریس ریلیزمیں کیا۔پریس ریلزمیں مزیدکہا گیا ہے کہ عدالت العالیہ میں آئین ومیرٹ کے خلاف پانچ ججزکی تعیناتی درحقیقت آزادکشمیرکے عدالتی نظام اورانصاف کی فراہمی پرایک سیاہ دھبہ ہے اورعام آدمی کوانصاف کی فراہمی ممکن نظرنہیں آتی۔اگران خرافات کوآج روکانہ گیاتوآنے والی نسلیں انصاف کوترسیں گی۔جموں کشمیرپیپلزپارٹی نے احتجاج کی راہ اختیارکرتے ہوئے عملی اقدام اعلان کردیاہے آزادکشمیرکی تمام اصول پسندانصاف پسندقوتوں سے اپیل ہے کہ وہ انصاف ومیرٹ آئین کی بالادستی کے لئے اس احتجاج میں بھرپورشرکت کریں۔جموں کشمیرپیپلزپارٹی کی قیادت کی جانب سے جموں کشمیرپیپلزپارٹی کے تمام عہدیداران وکارکنان جموں کشمیرپیپلزیوتھ کونسل،طلبہ ونگ،جموں کشمیر پیپلز سٹوڈنٹس آرگنائزیشن کوہدایات جاری کردی گئی ہیں کہ وہ یکم مارچ کواس ہونے والے احتجاج کے سلسلہ میں رابطہ مہم ہنگامی بنیادوں پرتیزکریں اوربھرپورشرکت کویقینی بنائیں۔جموں کشمیرپیپلزپارٹی کاماضی اس بات کاغمازہے کہ جموں کشمیرپیپلزپارٹی نے سردار خالدابراہیم خان کی قیادت میں میرٹ،انصاف،آئین کی بالادستی کے لئے ایک تاریخ سازجنگ لڑی ہے اورآزادکشمیرکے عدالتی نظام کوکالی بھیڑوں اورخرافات سے پاک کرنے کے لئے بڑی سے بڑی قربانی دریغ نہیں دیاجائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں