417

حویلی، ایس سی او کی اکلوتی ناقص سروس، حویلی کے عوام آج بھی پتھر کے دور میں‌جی رہے ہیں

حویلی (تلافی نیوز رپورٹ) آزاد کشمیر کے لائن آف کنٹرول سے ملحقہ ضلع حویلی کے ساتھ ہر دور میں سوتیلوں جیسا سلوک ہوا ہے، تعلیم، صحت ، روزگار ہر معاملے میں حویلی کہوٹہ کو یکسر نظر انداز کیا گیا ہے.

اب جبکہ آزاد کشمیر کے تمام اضلاع میں‌موبائیل سروس مہیا کرنے والی کمپنیوں نے 4جی سروسزکا آغاز کر دیا ہے ، حویلی کو ایک بار پھر نظر انداز کرتے ہوئے اسے ایس سی او کی اکلوتی اور ناقص سروس کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے.

ایس سی او کی ناقص کارکردگی سے نہ صرف عوام علاقہ پریشان ہیں بلکہ طلبہ سوشل میڈیا اور انٹرنیٹ جیسی سہولیات سے بھی یکسر محروم ہیں، دنیا میں 5 جی کا اجراء کیا جا رہا ہے ، جبکہ حویلی کے عوام 2 جی سروسز کیلئے بھی ترس رہے ہیں. ایس سی او کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے آج تک حویلی میں کوئی اور موبائل سروس نہ چل سکی اور نہ ہی ایس سی او اپنی سروسز بہتر کر سکا. ایس سی او کا انتہائی خراب نیٹ حویلی کہوٹہ آزاد کشمیر کی عوام کے لئے درد سر بن چکا ہے. ترقی کے اس جدید دور میں حویلی کی عوام پتھر کے دور میں جی رہی ہے .

متعلقہ حکام کی آنکھیں‌کھولنے کیلئے متعدد احتجاج، شٹر ڈاؤن، پہیہ جام بھی کسی کام نے آئے. حویلی ایس سی او کی ناقص موبائل سروس اور دیگر موبائل نیٹ ورکس کو حویلی میں اجازت دلوانے کے حوالے سے حویلی یوتھ فیڈریشن کا اسلام آباد پریس کلب کے سامنے ایک پر امن احتجاج بھی ارباب اختیار کو غفلت کی نیند سے بیدار نہ کر سکا.

اس ضمن میں‌ حویلی سے معززین کے ایک وفد نے پی ٹی اے میں‌ ایس سی او کی ناقص سروس اور دیگر نیٹ ورک کے اجراء کے حصول کے لئے دراخواست بھی دائر کی مگر خاطر خواہ نتائج برآمد نہ ہو سکے. پی ٹی اے کے موقف کے مطابق انھوں‌نے حویلی میں کسی نیٹ ورک کو اپنی سروسز مہیا کرنے سے نہیں‌روکا ہے.

اس پر المیہ یہ ہے کہ 2013 سے موبی لنک پاکستان کا ٹاور حویلی میں نصب ہے لیکن ایس سی او حکام کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے اسے آج تک چلایا نہیں جا سکا.

عوام علاقہ اور حویلی یوتھ فیڈریشن نے متعلقہ حکام کے سامنے یہ مطالبہ رکھا ہے کہ ایس سی او کی سروسز بہتر کی جائیں‌اور آزاد کشمیر میں کام کرنے والے دوسرے تمام نیٹ ورکس کو حویلی میں‌کام کرنے کی اجازت دی جائے تا کہ اہل حویلی بھی پتھر کے دور سے باہر نکل کر جی سکیں کیونکہ حویلی کہوٹہ علاقہ غیر نہیں‌بہرحال آزاد کشمیر کا حصہ ہے .

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں