441

فائزہ بیوٹی کریم میں خطرناک کیمیکلز کے استعمال کا انکشاف پی ایس کیو سی اے نے فائزہ بیوٹی کریم کی تیاری اور فروخت پر پابندی عائد کر دی

اسلام آباد(ویب ڈسک): پاکستان اسٹینڈرڈ اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی نے فائزہ بیوٹی کریم تیاری اور فروخت پر پابندی عائد کر دی۔لیبارٹری تجزیے کے نتیجے میں مذکورہ کریم میں خطرناک کیمیکلز کے استعمال کا انکشاف ہوا ہے۔تفصیلات کے مطابق ہمارے ہاں گوری رنگت کو خوبصورتی کا معیار سمجھا جاتا ہے۔یہی وجہ ہے کہ لوگ گوری رنگت کو پانے کے لیے اپنی جلد کے ساتھ نت نئے تجربات بھی کرتے نظر آتے ہیں۔
گوری رنگت کو پانے کے لیے ہر جتن کیا جاتا ہے۔ایک وقت تھا کہ بڑے بوڑھے اس کے لیے خصوصی ابٹن اور نسخے تیار کرتے تھے تاہم اب گزرتے ہوئے ایام کے ساتھ یہ رسم بھی دم توڑ چکی ہے۔اب ہمارے ہاں گوری رنگت کو عوام کی کمزوری سمجھتے ہوئے کاسمیٹکس کمپنیاں بھی خوب فائدہ اٹھاتی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ اس وقت مارکیٹ میں بیوٹی کریم کے نام پر بے تحاشا کریمیں موجود ہیں۔ان کریموں میں سے اکثر جلد کے لیے نقصان دہ ہیں۔اس چیز کی نزاکت کو سمجھتے ہوئے پاکستان اسٹینڈرڈ اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی بھی میدان میں آ گئی ہے۔پاکستان اسٹینڈرڈ اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی نے مارکیٹ میں موجود مختلف کریموں کا لیب تجزیہ کروایا تو معلوم ہوا کہ پاکستان کی ٹاپ بیوٹی کریم فائزہ بیوٹی کریم میں خطرناک کیمیکلز کا استعمال کیا جارہا ہے۔یہ کریم 2011 سے گوجرانوالہ میں تیار کی جارہی تھی جو اس وقت مارکیٹ کے اعتبار سے سب سے زیادہ فروخت ہونے والی کریم بن چکی ہے۔اس کریم میں 6mg/kg پارے کا استعمال کیا جارہا تھا جبکہ بین الاقوامی معیار کے مطابق محض 1mg/kg پارے کے استعمال کی اجازت ہے۔اس پر پاکستان اسٹینڈرڈ اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی نے اس کریم کے مینو فیکچررز پونیا برادرز کو نوٹس بھجوا دیا ہے جبکہ مذکورہ کریم کو صحت کے لیے خطرہ قرار دیتے ہوئے بین کر دیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں