68

وزیراعظم آزادکشمیرکی ہدایت پر کورونا سے نمٹنے اور رابطے بہتر بنانے کے لئے کشمیر ہائوس اسلام آباد میں مرکزی کنٹرول روم قائم

اسلام آباد (ویب ڈیسک ) وزیراعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان کی ہدایت پر جموں کشمیر ہائوس اسلام آباد میں کورونا سے نمٹنے اور رابطے بہتر بنانے کے لئے مرکزی کنٹرول روم قائم کر دیا گیا ہے۔ مرکزی کنٹرول روم کے سربراہ وزیراعظم راجہ محمد فاروق حیدر خان خود ہوں گے جبکہ وزیر اطلاعات، سیاحت، سپورٹس و امور نوجوانان راجہ مشتاق احمد منہاس اور ایس ڈی ایم اے کے وزیر احمد رضا قادری بھی اس میں شامل ہوں گے۔
مرکزی کنٹرول روم سے متعلق وزیر اطلاعات راجہ مشتاق احمد منہاس نے اپنے بیان میں کہا کہ کرونا سے نمٹنے کیلئے وفاقی، آزادکشمیر حکومت، وزراء، اپوزیشن سب اپنا اپنا کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کورونا کسی ایک ملک کا مسئلہ نہیں ہے یہ ایک عالمی وباء ہے جس سے نمٹنے کے لئے کثیرالجہتی حکمت عملی کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم راجہ محمد فاروق حیدر خان جنہیں آنکھوں کے آپریشن کے بعد ڈاکٹروں نے آرام کا مشورہ دیا تھا، نے خود کو اپنے عوام کی حفاظت کیلیے وقف کر دیا اور وہ خود تمام سرگرمیوں کی نگرانی کر رہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کی ہدایت پر مرکزی کنٹرول روم کا مقصد اداروں کے درمیان رابطے قائم کرنا ہے اس کے ذریعے سٹیٹ کوآرڈینیشن کمیٹی، وفاقی حکومت، این ڈی ایم اے کی جانب سے کئے جانے والے فیصلوں پر رابطہ قائم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ضرورت پڑنے پر وزیراعظم آفس، پاک فوج کے نمائندگان، چیف سیکرٹری آفس، سیکرٹریز، ایڈمنسٹریشن، پولیس، کمشنرز پونچھ، میرپور، مظفرآباد سے ہنگامی بنیادوں پر رابطہ کاری اور ویڈیو اجلاس منعقد کرنے کی ذمہ داری بھی مرکزی کنٹرول روم کو دی گئی ہے۔
انہوں نے کہا کہ کورونا کے خلاف کئے جانے والے اقدامات سے سب سے زیادہ متاثر مزدور اور دیہاڑی دار طبقہ ہوا ہے۔ وفاقی حکومت نے اس سلسلے میں پچیس لاکھ خاندانوں کی نشاندہی کی ہے جن کی مالی کفالت کی جائے گی۔ انہوں نے اس موقع پر کہا کہ یہ پوائنٹ سکورنگ یا ایک دوسرے کو نیچا دکھانے کا وقت نہیں ہے بلکہ یہ وقت ہے مل کر آگے بڑھنے کا ایک دوسرے کا دست و بازو بنیں اور مل کر آگے بڑھیں اور کورونا کو شکست دیں۔
انہوں نے کہا کہ وزیراعظم راجہ فاروق حیدر خان کی سربراہی میں ہم نے اپوزیشن، آپ سب، تاجروں، صنعتکاروں، عوام، اساتذہ، ڈاکٹرز، پولیس، سیاسی جماعتوں کے کارکنوں، بیوروکریسی، ایڈمنسٹریشن سب نے مل کر کام کرنا ہے اور اس وباء کا مقابلہ کرنا ہے۔ انہوں نے کہا تمام مذاہب کے پیروکار اس وقت یک نکاتی ایجنڈے پر گامزن ہیں اور وہ کورونا کو شکست دیکر بنی نوع انسان کی حفاظت کرنا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں