659

ہجیرہ پل کی مرمتی ، محکمہ شاہرات کی نااہلی اور ہڈ حرامی کھل کر سامنے آگئی

ہجیرہ (فیصل چغتائی) 21 مارچ 2018 کو روزنامہ تلافی کی وساطت سے ہجیرہ پل کے حوالے سے ایک تفصیلی خبر شائع ہوئی تھی جس میں پل کی بنیادوں کی خستہ حالی کو تصویروں کی مدد سے دکھایا، سمجھایا اور سنایا گیا تھا،

https://.facebook.com/story.php?story_fbid=1740201229359883&id=989079937805353


تصویروں میں صاف دیکھا جا سکتا ہے کہ کروڑوں روپے کی لاگت سے تیار ہونے والے اور 24 گھنٹے ہر قسم کی ٹریفک کیلئے کھلے رہنے والے پل کی بنیادوں میں سے سریے تک باہر نکل آئے تھے . پل کی بنیادیں صرف سریے (سٹیل ) کی مرہون‌ منت تھیں جو کسی بھی وقت سجدہ ریز ہو کر بڑی تباہی کا باعث بن سکتی تھیں.

یہی خبر اسی دن ہجیرہ سے صحافی راجہ جمیل کے پیج پر بھی شائع ہوئی تھی.

حسب توقع عوام کی طرف سے شدید رد عمل سامنے آیا اور محکمہ شاہرات کی نااہلی پر خوب تنقید کی گئی. عوامی لعن طعن سے مجبور ہر کر محکمہ شاہرات نے ایک بار پھر کمر باندھی اور ہڈ حرامی کی انتہا کرتے ہوئے پل کی بنیادوں‌کو مٹی اور پتھروں سے بھر کے سب اچھا کی رپورٹ اپنے اوپر والوں تک پہنچا دی گئ.

تصویر دیکھیں

اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ ساون کی طوفانی بارشوں کے سامنے مٹی کا یہ بندھ کتنی دیر ٹھہر سکے گا؟ اور جب اس پل کی بنیادیں‌پھر ننگی ہو جائیں گی تو یہ کتنی دیر بھاری ٹریفک کا بوجھ برداشت کر سکے گا؟

پلوں کی تعمیر کی تاریخ میں ہجیرہ کےاس پل کو یہ منفرد اعزاز حاصل ہوگا کہ اسکی بنیادوں کو پتھر، مٹی اور ریت سے تعمیر کیا گیا ہے. جیسی کھوکھلی ہماری سیاست ویسے کھوکھلی اس پل کی بنیادیں.

اس کارنامے کے بعد نہ صرف محکمہ شاہرات کا ناکامی ، نا اہلی اور ہڈ حرامی پوری طرح سے کھل کر سامنے آ ئی ہے بلکہ حلقہ دو کے سیاستدانوں کی یتیمی اور بے بسی صاف محسوس کی جا سکتی ہے.

ریاست کے دوسرے بڑے عہدے پر براجمان رہنے والے اسپیکر سردار غلام صادق کا گھر اس پل سے بس کچھ ہی فاصلے پر ہے اور وہ روزانہ اسی پل سے گزر کر اپنے گھر تشریف لے جاتے ہیں. جب انکے اپنے گھر کے راستے کی یہ حالت ہے تو باقی ریاست میں کیا تیر مارے ہونگے خود اندازہ لگایا جا سکتا ہے.

موجودہ ایم ایل اے عمر کے اس حصے میں ہیں کہ ان سے کوئی بھی شکوہ شکایت جائز نہیں ہے مگر برطانیہ سے امپورٹڈ انکے سیاسی جانشین سردار ارزش کو اگر فوٹو سیشن اور فیس بک سے فرصت ہوتو انھیں یاد دلایا جائے کہ ٹاؤن ایریا کے بیچوں بیچ مٹی اور ریت کی بنیادوں‌پر کھڑا یہ پل ان کی خاص نظر کرم کا منتظر ہے.


نیلم سانحے کے زخم ابھی تازہ ہیں اور ہم ہجیرہ پل کی اس حالت کے ساتھ ایک اور دردناک حادثے کے انتظار میں ہیں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں