534

ریحام خان کی کتاب منظرعام پر کب آئے گی اور کتاب میں‌ہے کیا ..؟

لندن (نیوز ڈیسک ) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان نے آئندہ ہفتے لندن میں اپنی کتاب لانچ کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے ۔
انگریزی جریدے’مارننگ میل‘ کے مطابق ریحام خان نے اپنی کتاب میں سابق شوہر عمران خان اور ڈاکٹراعجاز خان پر کئی الزامات عائد کیے جبکہ مصنفہ کو بھی میاں بیوی کے درمیان قابل اعتماد تعلقات کو عزت نہ دینے پر تنقید کی جارہی ہے جبکہ ایک پاکستانی تارک وطن نے لندن کی ایک عدالت میں ریحام کی کتاب کے مواد کیخلاف پٹیشن بھی دائرکردی۔

یہ بھی الزام عائد کیاجارہاہے کہ عمران خان سے طلاق کے بعد ریحام خان نے مبینہ طورپر امیرمقام اور شہبازشریف کے ذریعے مسلم لیگ ن سے رابطے استوار کرلیے ہیں اور تب سے ہی وہ مسلم لیگ ن کے ہاتھوں میں کھیل رہی ہیں، جیسے ہی الیکشن کمیشن نے عام انتخابات کی تاریخ کا اعلان کیاتو ریحام خان نے بھی اپنی کتاب لانے کا اعلان کردیا۔

ذرائع کے حوالے سے بتایاگیاکہ مسلم لیگ ن کی قیادت نے ریحام خان کو مشورہ دیا ہے کہ اپنی کتاب کی تقریب رونمائی میں مختلف سیاسی جماعتوں کے لوگوں کو مدعو کریں تاکہ کتاب پر مسلم لیگ ن کا ٹھپہ نہ لگے۔کتاب پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے اوورسیز پاکستانیوں نے اسے اسلامی روایات اور اقدار کے منافی قراردیا۔

اس نئے پنڈورے بکس کے کھلتے ہی پاکستان کے مختلف تجزیہ نگاروں‌اور دانشوروں نے بھی اپنے قلم سنبھال لئے اور مختلف انکشفات کرنے شروع کر دیے.

معروف تجزیہ نگار حسن نثار کے ایک کالم میں‌ضیاء شاہد کی ایک کتاب کا تذکرہ ہے جس میں وہ لکھتے ہیں کہ “ضیاء شاہد جیسا سینئر صحافی، جید دانش ور اور کئی کتابوں کا مصنف اپنی کتاب ’’باتیں سیاستدانوں کی‘‘ کے صفحات 365,364میں لکھتا ہے۔

’’جنرل (ر) حمید گل کافی پریشان تھے۔ دو بار انہوں نے مجھے فون کیا اور کہا کہ آپ اسلام آباد آؤ۔ عمران روزانہ ایک بار کنٹینر سے اتر کر بنی گالہ اپنے گھر جاتا ہے۔ آپ ان سے ملو اور سمجھاؤ کہ ہرگزہرگز اس عورت (ریحام خان) کے چکر میں نہ پڑے۔ مجھے نہیں معلوم حمید گل کی معلومات کا ذریعہ کیا تھا کیونکہ فون پر انہوں نے مجھے نہیں بتایا لیکن ان کے بیٹے عبداللہ گل نے باپ کی وفات کے بعد لاہور آکر میرے دفتر میں مجھے تفصیل بیان کی کہ ریحام خان شادی سے پہلے میرے والد حمید گل سے ملنے ہمارے گھر آئی تھیں۔ میرے والد نے مجھ سمیت تمام لوگوں کوکمرے سے نکال کر علیحدگی میں ریحام سے بات کی۔

ملاقات ختم ہوئی اور ریحام جانے لگیں تو وہ بہت پریشان تھیں اور میرے پوچھنے پر میرے والد نے بتایا تھا کہ میں نے ریحام سے کہا ’’میں آپ کو نہیں جانتا لیکن کیا آپ فلاں فلاں شخص کو جانتی ہو اور کیا فلاں ادارے سے آپ کا تعلق نہیں رہا اور کیا آپ کو پاکستان بھجوانے اور عمران سے ملانے میں فلاں فلاں اشخاص سرگرم نہیں رہے؟ عزیزم عبداللہ گل کے بقول ریحام خان اس پر اپ سیٹ ہوگئیں۔ عبداللہ گل کو یقین تھا کہ ریحام خان کو پتہ چل گیا تھا کہ میرے والد ان کی حقیقت کو پہچان گئے ہیں۔ عبداللہ گل اسلام آباد میں موجود ہیں اور اپنے گھر میں مل سکتے ہیں۔”

معروف کالم نگار جاوید چوہدری نے اپنے ایک کالم میں‌دعوی کیا ہے پاکستان میں میاں شہباز شریف اور عمران خان یہ دونوں ریحام خان کے ٹارگٹ تھے‘‘ ریحام بنیادی طور پر اوور ایمبیشس خاتون ہے‘ یہ نمبر ون کی لسٹ میں آنا چاہتی تھی‘ اس نے 2007ء میں لندن میں شاہ رخ خان کے ساتھ چند سیکنڈ کا اشتہار بھی کیا تھا۔

انکا یہ دعوی بھی تھا ریحام خان میں مشہور نفسیاتی بیماری بائی پولر کی تمام علامتیں موجود ہیں‘ یہ جب اچھی ہوتی ہے تو یہ دنیا کو حیران کر دیتی ہے اور یہ جب پلٹا کھاتی ہے تو یہ دوسرے کو کچا کھا جاتی ہے‘ یہ شادی تک ایک ایسی حیران کن خاتون ثابت ہوئی جس کے لیے عمران خان جیسے بزرگ کنوارے دعائیں کرتے رہتے ہیں لیکن یہ شادی کے بعد دوسرے قطب تک پہنچ گئی‘یہ ناقابل برداشت ہو گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں